ٹرمپ خاندان کے افراد سیکرٹ سروس کے ایجنٹوں کے ‘نامناسب طور پر قریب’ پہنچ گئے، کتاب کا دعویٰ

فوٹو: بشکریہ دی گارڈئین

ٹرمپ کی سابقہ بہو وینیسا اور بیٹی ٹیفنی سے متعلق بانڈز پر خدشات کا انکشاف کیرل لیوننگ کی زیرو فیل میں۔

امریکی سیکرٹ سروس پر ایک نئی کتاب کے مطابق ٹرمپ خاندان کے دو افراد ان کی حفاظت کرنے والے ایجنٹوں کے “نامناسب اور شاید خطرناک حد تک قریب” پہنچ گئے، جس وقت ڈونلڈ ٹرمپ صدر تھے۔

زیرو فیل: واشنگٹن پوسٹ کی نامہ نگار کیرل لیوننگ کی جانب سے سیکرٹ سروس کا عروج اور زوال اگلے ہفتے شائع کیا گیا ہے۔ گارڈین نے ایک کاپی حاصل کر لی ہے۔ لیوننگ نے سیکرٹ سروس میں سیکورٹی ناکامیوں پر رپورٹنگ کرنے پر 2015 میں پلٹزر انعام جیتا تھا۔

وہ پوسٹ ٹیم کا بھی حصہ تھیں جس نے قومی سلامتی ایجنسی کی نگرانی کی تکنیک کے بارے میں ایڈورڈ سنوڈن کی لیکس پر کام کرنے کے لئے پلٹزر جیتا تھا اور روسی انتخابات میں مداخلت اور ٹرمپ اور ماسکو کے درمیان روابط کے بارے میں بڑے پیمانے پر رپورٹنگ کی تھی۔ انہوں نے تین پولک ایوارڈ بھی جیتے ہیں۔

فلپ رکر کے ساتھ لیوننگ نے “اے ویری اسٹیبل جینیئس: ڈونلڈ جے ٹرمپ کی ٹیسٹنگ آف امریکہ” کی مشترکہ تصنیف بھی کی۔ اپنی نئی کتاب میں انہوں نے لکھا ہے کہ سیکرٹ سروس کے ایجنٹوں نے خبر دی ہے کہ صدر کے سب سے بڑے بیٹے ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر کی اہلیہ وینیسا ٹرمپ نے “ان ایجنٹوں میں سے ایک کو ڈیٹ کرنا شروع کر دیا ہے جو اس کے خاندان کو تفویض کیے گئے تھے”۔

وینیسا ٹرمپ نے مارچ 2018 میں بلا مقابلہ طلاق کے لئے درخواست دائر کی تھی۔ لیوننگ کی رپورٹ ہے کہ متعلقہ ایجنٹ کو تادیبی کارروائی کا سامنا نہیں کرنا پڑا کیونکہ اس وقت نہ تو وہ اور نہ ہی ایجنسی وینیسا ٹرمپ کی سرکاری سرپرست تھی۔ 

لیوننگ یہ بھی لکھتی ہیں کہ اپنی دوسری بیوی مارلا میپلز کے ساتھ ڈونلڈ ٹرمپ کی بیٹی ٹیفنی ٹرمپ نے ایک بوائے فرینڈ سے رشتہ توڑ لیا اور ” سیکرٹ سروس کے ایجنٹ کے ساتھ اکیلے وقت گزارنا شروع کر دیا”۔

کتاب میں کہا گیا ہے کہ سیکرٹ سروس کے رہنماؤں کو اس بات کی فکر ہو گئی کہ ٹیفنی لمبے، تاریک اور خوبصورت ایجنٹ کے کتنے قریب پہنچتی نظر آئی۔” ایجنٹوں کو ان لوگوں کے ساتھ ذاتی تعلقات قائم کرنے سے منع کیا گیا ہے جن کی وہ حفاظت کرتے ہیں، اس تشویش کی وجہ سے کہ اس طرح کے احساسات ان کے فیصلے کو دھندلا سکتے ہیں۔

لیوننگ لکھتی ہے کہ ٹیفنی ٹرمپ اور ایجنٹ دونوں نے کہا کہ کچھ بھی ناخوشگوار نہیں ہو رہا ہے اور انہوں نے ایجنٹ کی ملازمت کی نوعیت کی نشاندہی کی جس کا مطلب ہے کہ وہ اپنے چارج کے ساتھ تنہا وقت گزاریں۔ اس کے بعد ایجنٹ کو دوبارہ تفویض کیا گیا۔ لیونیگ نے یہ بھی بتایا ہے کہ یہ واضح نہیں ہے کہ کیا ڈونلڈ ٹرمپ جانتے ہیں کہ سیکرٹ سروس کے اہلکار ان کی بیٹی اور بہو کے بارے میں کیا کہہ رہے ہیں۔

لیکن وہ کہتی ہیں کہ صدر نے بار بار سیکرٹ سروس کے عملے کو ہٹانے کی کوشش کی جسے وہ ملازمت کے لئے بہت کم سمجھتے تھے۔ بتایا جاتا ہے کہ ٹرمپ نے کہا کہ میں ان موٹے لوگوں کو اپنی تفصیل سے دور کرنا چاہتا ہوں، ممکنہ طور پر دفتر میں مقیم اہلکاروں کو فعال ایجنٹوں کے ساتھ الجھا دیا گیا ہے۔” اگر وہ سڑک پر نہیں بھاگ سکتے تو وہ میری اور میرے خاندان کی حفاظت کیسے کریں گے؟”

اردو پبلشر کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں