بائیڈن انتظامیہ کی ٹرمپ دور میں پابندی کے شکار مسلم ممالک کو ویزے کی پیشکش

مسلمان پابندی کے خاتمے کا مطلب امریکہ کھلا نہیں ہے

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی متنازع امیگریشن پالیسی کے تحت 13 مسلم یا مسلم اکثریتی ممالک کے باشندوں کو ویزہ دینے سے انکار کردیا تھا تاہم موجودہ حکومت نے یہ پابندی اُٹھالی ہے۔

امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائز کا کہنا ہے کہ 20 جنوری 2020 سے قبل جن کے ویزے مسترد کیئے گئے تھے، وہ نئی درخواست بمعہ فیس جمع کرا سکتے ہیں تاہم 20 جنوری 2020 کے بعد مسترد ہونے والے ویزہ درخواست گزار کو فیس جمع کرانے کی ضرورت نہیں ہوگی۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: مسلمان پابندی کے خاتمے کا مطلب امریکہ کھلا نہیں ہے

ہے کی سابق صدر ٹرمپ کے دور میں ویزہ پابندی کے شکار ممالک کی فہرست میں چند ایک تو نکال دیا گیا تھا تاہم اس سے کہیں زیادہ ممالک کو فہرست میں شامل کرلیا گیا تھا جن میں ایران، شام، یمن، لیبیا، شمالی کوریا، میانمار، اریٹیریا، کرغزستان، نائیجیریا، صومالیہ، سوڈان، تنزانیہ اور وینزویلا شامل ہیں

Source :

اردو پبلشر کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں