سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے جمال خاشقجی کے قتل کی منظوری دی.ممکنہ امریکی رپورٹ

Urdu Publisher
فوٹو: بشکریہ گوگل| رائٹرز

برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز نے چار نامعلوم امریکی حکام کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ امریکہ میں صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل کی تحقیقات پر مبنی خفیہ رپورٹ کو جاری کرنے کی تیاریاں کر رہی ہے جس کے بارے میں عام خیال یہ ہے کہ اس رپورٹ میں قتل کا الزام سعودی ولی عہد شہزادے محمد بن سلمان پر عائد کیا گیا ہے۔ اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے جمال خاشقجی کے قتل کی منظوری دی اور ’ممکنہ طور پر احکامات‘ جاری کیے تھے۔

urdu publisher
urdupublisher.com

امریکی ایوان صدر وائٹ ہاؤس کے مطابق صدر نے یہ رپورٹ پڑھ لی ہے اور اب وہ سعودی عرب کے فرما روا شاہ سلمان سے جلد بات کریں گے۔

امریکی صحافی اور امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کے نمائندے جمال خاشقجی کو سنہ 2018 میں استنبول کے سعودی سفارت خانہ میں بڑی بے رحمی سے قتل کر دیا گیا تھا۔ سعودی عرب کے سفارت خانے کی عمارت کے اندر سعودی اہلکاروں کے ہاتھوں ہونے والے اس قتل میں ملوث ہونے کے تمام الزامات کی سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے تردید کی تھی۔

جمال خاشقجی کے قتل کی رپورٹ کا زیادہ حصہ امریکی خفیہ ادارے سی آئی آے کی تحقیقات پر مشتمل ہے۔

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے جمال خاشقجی کے قتل کی منظوری دی.ممکنہ امریکی رپورٹ” ایک تبصرہ

اردو پبلشر کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں